آج بھی

by Dr Maqsood Hasni on November 30, 2014, 05:44:23 AM
Pages: [1]
ReplyPrint
Author  (Read 636 times)
Dr Maqsood Hasni
Guest
Reply with quote


آج بھی

بہت سے گم ہوئے
بہت سے مر گیے
کچھ پس ستم کیے
کچھ عدم معنویت کی صلیب چڑھے
ہاں‘ شاہ نواز
تاریخ کی لوح پر زندہ رہے
وہ ہی وقتوں کے ہیرو ٹھہرے
جن پر ملاں کی مہر ثبت ہوئی
انہیں کون جھٹلائے
سچ کا آئینہ دکھائے
جھوٹ‘
معنویت کے ساتھ زندہ رہا
سکھ کا سانس لیتا رہا
احساس بنا
عزت کی دلیل ہوا
معبدءتوقیر میں پڑا
یہ صدیوں کا ورثہ
طاق میں رکھ کر
کوئی کیوں‘
اس لفظ کو تلاشے
جو معاشی روایت نہیں
سماجی حکایت نہیں
بےسر وادی معاش ہو کہ
شاہ کے صنم کدے
شہوت کی عشرت گاہوں
گنجان آباد صحراؤں میں
اس کا کیا کام
سچ کے شبدوں کی خاطر
فاقہ کی کربلا سے گزر کر
حق کے ہمالہ کی چوٹی
کوئی کیوں منزل بنائے
سپیدی لہو
کب کبھی‘
کسی سرمد کی ہم سفر رہی ہے
حمادی کے فتوے نے
راکھ گنگا کے حوالے نہ کی
شاہ نواز حرف اور نقطے
مظلوموں کی شریعت ہے
آج بھی‘
لوح فہم و احساس کے ایوان پر
ان کی سچائی کا علم لہراتا ہے
11-7-1978
Logged
Pages: [1]
ReplyPrint
Jump to:  

+ Quick Reply
With a Quick-Reply you can use bulletin board code and smileys as you would in a normal post, but much more conveniently.


Get Yoindia Updates in Email.

Enter your email address:

Ask any question to expert on eTI community..
Welcome, Guest. Please login or register.
Did you miss your activation email?
September 30, 2022, 09:12:13 AM

Login with username, password and session length
Recent Replies
[September 29, 2022, 06:49:58 PM]

[September 27, 2022, 05:06:18 PM]

[September 19, 2022, 02:16:10 PM]

[September 10, 2022, 12:45:22 PM]

[September 08, 2022, 07:03:47 PM]

[September 06, 2022, 07:30:51 PM]

[September 06, 2022, 01:26:16 AM]

[September 06, 2022, 01:06:19 AM]

by G s
[September 01, 2022, 12:13:36 PM]

[August 31, 2022, 07:17:58 AM]
Yoindia Shayariadab Copyright © MGCyber Group All Rights Reserved
Terms of Use| Privacy Policy Powered by PHP MySQL SMF© Simple Machines LLC
Page created in 0.103 seconds with 22 queries.
[x] Join now community of 8452 Real Poets and poetry admirer